Tags » Best Shairy

اب اداس پھرتے ہو سردیوں کی شاموں میں

اب اداس پھرتے ہو سردیوں کی شاموں میں
اِس طرح تو ہوتا ہے اِس طرح کے کاموں میں

اب تو اُس کی آنکھوں کے میکدے میّسر ہیں
پھر سکون ڈھونڈو گے ساغروں میں جاموں میں

دوستی کا دعویٰ کیا عاشقی سے کیا مطلب
میں ترے فقیروں میں میں ترے غلاموں میں

رائیگاں مسافت میں کون ساتھ چلتا ہے
سب ہی چھوڑ جاتے ہیں دو چار گاموں میں

زندگی بکھرتی ہے شاعری نکھرتی ہے
دل بروں کی گلیوں میں دل لگی کے کاموں میں

جس طرح شعیب اُس کا نام چُن لیا تم نے
اُس نے بھی ہے چُن رکھا ایک نام ناموں میں
شعیب بن عزیز

Urdu Ghazals

عشق ميں غيرتِ جذبات نے رونے نہ ديا

عشق ميں غيرتِ جذبات نے رونے نہ ديا
ورنہ کيا بات تھي، کِس بات نے رونے نہ ديا

آپ کہتے تھے کہ رونے سے نہ بدليں گے نصيب
عمر بھر آپ کي اِس بات نے رونے نہ ديا

رونے والوں سے کہو، اُن کا بھي رونا رو ليں
جن کو مجبوريِ حالات نے رونے نہ ديا

تجھ سے مِل کر ھميں رونا تھا، بہت رونا تھا
تنگيِ وقتِ مُلاقات نے رونے نہ ديا

ايک دو روز کا صدمہ ھو تو رو ليں ، فاکر
ھم کو ھر روز کے صدمات نے رونے نہ ديا

“سدرشن فاکر”

Urdu Ghazals