Tags » Urdu

Si Do Merai Lab

Si do merai lab k ab ye ruk na pain gai,
Jo an pari hai hum pe fakat wo dohrain gai,
Si do merai lab k ab ye ruk na pain gai, 157 more words

Poem

Romantic Tragic Poem

محفل غم سے همیں نکال دیا گیا
اپنے دل سے بهی همیں بهلا دیاگیا

روداد کفس میں اپنی سناوں کس کو
کہ باد سبا یهاں آتی هی نهیں

رنج افزا هے یہ نمکین هوا
کہ هوی همیں بےجرم مجوس بل

سن سن کے سیاد نے فریاد هماری
یہ تک نہ کہا کہ همیں رهم هی نہیں

هماری یہ درد بهری داستاں ہے کیا
ان لوگوں کے لیے تو رنگ افسانہ

جس دل میں رحم هی نهیں وہ کیا
گلبانگہ کفس کهے کہ اس سے پنہ

ارسلان قیوم

Pakistan

Origami tissue paper flower(inUrdu)

آئیں ٹشو پیپر سے پھول بنانا سیکھیں۔

آپ کو یہ پھول بنانے کے لیے کن چیزوں کی ضرورت ہے:۔

۔1۔ کسی بھی رنگ مثلا (سفید،سرخ،گلابی،جامنی،نیلا،پیلا یا جو آپ کو پسند ہو)کے ٹیشو پیپر6 یا 8عدد(جتنا بڑا اور ملائم پھول بنانا ہے اتنے زیادہ ٹیشو لیں)۔

(pipe cleaner)۔2۔ دھاگہ،ربن یا پائپ کلینر

آئیں پھول بنائیں:۔

۔1۔ تمام ٹشوز کو برابر کر کے رکھیں جیسا کہ تصویر میں دیکھایا گیا ہے۔

۔2۔ اب ان کو ایک ساتھ تقریبا ایک یا آدھے انیچ کی مناسبت سے اس طرح موڑیں جس طرح کاغذ کا پنکھا موڑا جاتا ہے۔مدد کے لیے تصویر دیکھیں۔

۔3۔اب بیچ میں ربن،دھاگہ یا پائپ کلینر باندھ دیں۔

۔4۔ اب اوپر سے تھوڑا سا گولائی کی شکل میں کاٹ دیں۔

۔5۔ اب آپ ان کو اپنے دائیں طرف موڑیں۔بلکل تصویر کی طرح۔

۔6۔ اس کی دھاگے کے ایک طرف ٹشوز کو جتنا کھول سکتے ہیں کھولیں۔

۔7۔ اب ایک ایک ٹشو کو آرام سے آہستہ آہستہ اوپر لے جائیں۔

۔8۔ اسی طرح اس طرف جتنے ٹشو ہوں ان کو کھولیں آہستہ آہستہ کہ کوئی پھٹے نہ۔

۔9۔اب اسی طرھ دھاگے کے دوسری طرف بھی یہی کریں(دیکھیں نمبر6 سے 8)۔

۔10۔اب آپ کا پھول تیار ہے۔آپ اس کو کہیں بھی سجانے کے لیے استعمال کر سکتے ہیں۔کسی تحفے پہ لگائیں،گلدستہ بنائیں،بالوں میں لگائیں یا

کہیں لٹکائیں(مثلا دروازے یا دیوار پر)اور اپنے گھر کو دل کش بنائیں۔

Urdu

ہم نے ظلمت کو بنایا ہے گلستاں کا امیں

ہم نے ظُلمت کو بنایا ہے گُلِستاں کا اَمِیں
ساتھ گُلچِیں کے ہمیں دار پہ کِھینچا جائے

شاعر: نوید رزاق بٹ

Naveed Razzaq Butt

Until He Never Came Back

She holds her child’s face in her hands

The softness of his cheeks make her palms feel coarse

His big, bright eyes, beady and full of innocence, illuminate her’s… 97 more words

Poetry

Khoon ke Aansoo

Phir na nikalna iss tareh ay guruub e aftab
Ke mera dil aaj khoon ke aansoo ro raha hay

Ye mera dil, meri dharkan, meri saans… 120 more words

Politics