Tags » Achievements

Happy Birthday to Me...

Dear Me,

You’re a week away from turning 30! Congratulations! Here is a list of your major accomplishments in the last 5 years, in random order: 311 more words

One year later

Two years into this ‘new’ job and I find myself being a lot different than I used to be. I learnt a lot, seen a lot more, and breathed a whole lot differently these days. 750 more words

Work

First year of being a Twitch streamer

I’ve been wanting to write a post about my first year of being a Twitch streamer, because I love reading about other peoples experiences, and I would totally like to be able to go back to this post in a year, maybe even in 5 years, and be able to see if things has changed or if something new has happened. 951 more words

Personal

Cambridge University puts Stephen Hawking’s PhD thesis online

Hindustan Times | Oct 23, 2017  |  Prasun Sonwalkar | London |

The university said hopes to encourage former academics, including 98 Nobel affiliates, to make their work freely available to all. 304 more words

Achievements

My Achievements

You can be the most beautiful person in the world and everybody sees light and rainbows when they look at you, but if you yourself don’t know it, all of that doesn’t even matter.

644 more words
My Journey

What A Difference A Year Makes

It’s been an entire year since I published my first post on my own blog. I really feel like things have changed a lot since then. 987 more words

Mental Health

اپنے بارے میں کچھ بتائیے" کا جواب کیسے دیا جائے"

جب ہم جاب انٹرویو کے لیے جاتے ہیں تو انٹرویو لینے والے کا اکثر پہلا سوال یہی ہوتا ہے کہ اپنے بارے میں کچھ بتائیے۔ اور اپنے بارے میں بات کرنا یقینا ایک مشکل ترین کام ہے جسے ہر شخص بیان نہیں کر سکتا۔ یہیں سے انٹرویور پر ہمارا پہلا تاثر ہی غلط پڑتا ہے اور کبھی کبھار مزید سوالات کی گنجائش بھی نہیں رہتی۔ انٹرویو لینے والا وہیں سے ہمیں یہ کہہ کر بھیج دیتا ہے کہ اگر آپ شارٹ لسٹ ہوتے ہیں تو آپ کو بذریعہ فون آگاہ کیا جائے گا۔

زیادہ تر امیدواروں کے لیے یہ ایک مشکل سوال ہوتا ہے حالانکہ یہ بہت ہی اہم سوال ہے یہ امیدوار کو موقع فراہم کرتا ہے کہ وہ اپنی مثبت خوبیوں سے انٹرویور کر آگاہ کر سکے۔ اس کا سامنا کرنے کے لیے تیار رہیں کیونکہ آج کل اس سے کترایا نہیں جا سکتا۔ مگر کیسے یہ بڑا اہم سوال ہے اور یہ بلاگ آپ کی جواب میں مدد کرے گا۔

جواب کا غلط طریقہ

سوال کا جواب دینے کے بہت سارے آسان اور فہم طریقے ہو سکتے ہیں لیکن امیدوار کا ایک جواب جوکہ اکثر امیدوار دیتے ہیں اس کی شکل میں تبدیلی کر دیتے ہیں۔  اکثر امیدوار اس سوال کے جواب میں دوسرا سوال پوچھ لیتے ہیں کہ آپ کیا جاننا چاہتے ہیں۔ اس کا مطلب یہی ہوا کہ آپ س نوکری کے لیے ابھی تیار نہیں ہیں یا پھر تیاری کر کے نہیں آئے ہیں۔  جبکہ اس کا صحیح جواب خود اعتمادی سے دیا جانا چاییے جیسا کہ خیال کیا جاتا ہے۔ انسان کو اپنے بارے میں خود اعتماد ہونا چاہیے۔

صحیح جواب کیسے دیا جائے؟

صحیح جواب دینے کے دو طریقے ہو سکتے ہیں

انٹرویرر کی دلچسپیاں کیا کیا ہیں ؟

 آپ کی زندگی میں سب سے بڑی کامیابی کیا ہے؟

 جینی کرنسٹن نیویارک امریکہ میں کیریر کوچ ہیں ان کا کہنا ہے کہ ” سب سے بڑی غلطی جو لوگ کرتے ہیں وہ ان کا یہ خیال ہے کہ انٹرویور انہیں شاید بحیثیت انسان جاننا چاہتا ہے  اس لیے وہ اس قسم کی باتیں شروع کر دیتے ہیں جیسا کہ میرا نام ایڈورڈ ہے اور میں ہوبوکین میں پیدا ہو اور پھر ہمارا خاندان منتقل ہو گیا وغیرہ وغیرہ ۔ غلط بالکل غلط۔ انٹرویور تو یہ جاننا چاہتا ہے کہ کیا آپ یہ کام کر سکتے ہیں آپ ایک اچھے ٹیم ممبر ہو سکتے ہیں آپ نے اپنے پچھلے تجربے میں کیا کامیابی حاصل کی ہے جوکہ اس کی کمپنی کے لیے کارآمد ہو سکتی ہے”

نیکسی فوکس فاکس کوچنگ ایسو سی ایٹس کی ڈائریکٹر ہیں وہ کہتی ہیں۔ “بہت سے امیدوار اس سوال کے لیے تیار نہیں ہوتے، اس لیے وہ پہلے تو پریشان ہو جاتے ہیں اور اپنی ذاتی کہانیاں سنانے لگ جاتے ہیں یا پھر پرانی جاب کی باتیں۔ ” ان کا خیال ہے کہ امیدواروں کو پہلے حال ہی میں چھوڑی گئی نوکری سے شروع کرنا چاہیے اور یہ بتانا چاہیے کہ وہ اس نوکری کے لیے کونکر موضوع ترین ہیں۔ ان کا مزید کہنا ہے کہ تمام تر انٹرویو کی کامیابیوں کی چابی یہی ہے کہ آپ انٹرویو کو اس نوکری کے متعلق بتائیں جس کے لیے آپ انٹر ویو دے رہے ہیں۔ دوسرے لفظوں میں آپ کو وہی فروخت کرنا چاہیے جو کہ خریدار خریدنا چاہتا ہے۔

اپنی بڑی کامیابیوں پر روشنی ڈالیے

گرگ میکا 24/7 مارکیٹنگ کی مینیجر ڈائریکٹر ہیں وہ نوکری کی تلاش کرنے والے کو مشورہ دیتے ہوئے کہتے ہیں “اپنی کامیابیوں کی کہانی بیان کیجیے۔” جیسا کہ پ انٹر ویور کو یہ بتائیں کہ لوگوں کا خیال ہے کہ آپ بہت محنتی ہیں، اور پھر اسے اپنی محنت کی ایک چھوٹی سی کہانی سنائیں جس میں آپ کو کامیابی ملی ہو۔ “کیونکہ کہانیاں زیادہ دیر تک یاداشت میں برقرار رہنے کی طاقت رکھتی ہیں ” ان کا کہنا ہے

اس کی ایک مثال فران کیپو ہیں جوکہ ایک کامیڈین ہیں اور انہوں نے اپنے آپ کو “دنیا کی تیز ترین بولنے والی خاتون” منوایا ہے۔ ان کا کہنا ہے۔ “مین جب انٹرویو کے لیے جاتی ہوں تو میرے پاس شروع کے کچھ الفاظ ہوتے ہیں جن کی ادائیگی کے بعد میں یہ ضرور کہتی ہوں کہ خوش قسمتی سے گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں میرا نام تیز ترین بولنے والی خاتون کے طور پر شامل ہے۔ اور پھر میں مزید تفصیل بتاتی ہوں” ان کا کہنا ہے کہ آپ کچھ بھی کریں مگر بہترین وہی ہے جو یاد رہ جاتا ہے  اور وہ بھی اچھے طریقے سے۔ “اپنے بارے میں کچھ بتاؤ ” جیسے سوال کا جواب دینے کا مقصد دراصل اپنے آپ کو دوسروں سے منفرد بنانا ہونا چاہیے۔

مورین اینڈرسن “دی کیرئیر کلینک” ریڈید شو کے ہوسٹ ہیں وہ جواب کو مختصر کرنے کی اہمیت پر زور دیتے ہیں۔ “ایمپلائر شروعات کرنے کے لیے آپ کے بارے میں تھوڑا بہت جاننا چاہتے ہیں نہ کہ آپ کی پوری زندگی کی کہانی ۔ صرف دو یا تین باتیں بیان کریں جو دلچسپ اور کارآمد ہوں۔ سوال کا جواب دینے کے لیے ایک منٹ کا وقفہ بھی لیں سکتے ہیں”

آپ جو کہنا چاہ رہے ہیں یا جن چیزوں کو بیان کرنا چاہ رہے ہیں ان کے لیے ضروری ہے کہ آپ انہیں ایک سادہ کاغذ پر لکھ لیں اور انٹرویو سے پہلے دہراتے رہیں اسے وقت دیں اس وقت تک کہ یہ سب کہنا قدرتی لگے ۔ اور پھر دوبارہ اس کو دہرائیں۔ مقصد یہی ہے کہ آپ انٹرویور کو اس کی دلچسپی کی چیزیں بتائیں اتنا بھی نہیں کہ پھر اسے آپ کو کافی کے وقفے پر ٹوکنا پڑے۔

اس سوال سے گھبرانے کے بجائے پہلے سے تیار شدہ جواب کے لیے خوش آمدید کہیے۔ صحیح اور متوازن جواب دیجیے کیونکہ یہ امیدوار کو بات مزید بڑھانے میں مدد دے گا۔ یہی دراصل اپنے آپ کو جاب مارکیٹ میں فروخت کرنے کا ایک موزوں طریقہ ہے۔

Achievements