Tags » Current Affairs

NYT's Facebook Exposé on Company's Response to Election Crisis

An investigation by The New York Times revealed how Facebook fought back against its critics of the Company’s response to the election crisis with delays, denials and a full-bore campaign in Washington. 14 more words

Current Affairs

Facebook Is a Normal Sleazy Company Now

Interesting reading: excepts from an article by Siva Vaidhyanathan in the Slate web site at http://bit.ly/2PWUQa6:

“The leaders of Facebook can no longer pretend they are special people running a special company. 187 more words

Online Security

15 November, 2018 20:58

NADEEM MALIK LIVE

www.humnews.pk.com

15-11-2018

نواز شریف پاناما پر روز اس لئیے بیانات بدلتا ہے کیونکہ جھوٹ کے کوئی پاؤں نہیں ہوتے۔ زرتاج گل کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

نواز شریف اب تک پاناما کیس پر کئی یو ٹرن لے چکے ہیں بہتر ہوتا کہ ایک ہی دفعہ سچ بول دیتے۔

آج نواز شریف پارلیمنٹ میں کی ہوئی تقریر پر استثنی مانگ رہے ہیں۔

جب کسی طاقتور پر کرپشن کی وجہ سے ہاتھ ڈالا جاتا ہے وہ کہتا ہے کہ قانون شکنی ہو گئی ہے۔

پی ٹی آئی کے جس شخص کے خلاف بھی کیس ہے وہ عدالت میں پیش ہوتا ہے اور ہر سوال کا جواب دیتا ہے۔

چاہے پی ٹی آئی کا بندہ ہو یا کوئی اور جو بھی کرپشن کرے گا اس کا احتساب ہو گا۔

مسلم لیگ ن کے ملک محمد احمد نے کہا کہ

نواز شریف کے کیس کے دو پہلو تھے ایک قانونی اور دوسرا سیاسی تھا۔

نواز شریف سے سیاسی پہلو پر کئی غلطیاں ہوئی ہیں۔

پاناما کیس میں قانونی پہلو کو سیاسی طور پر حل کرنے کی کوشش کی گئی جو غلطی تھی۔

ہم نواز شریف سے کہتے رہے کہ احتیاط سے کام لیں یہ روز عدالت کے باہر کھڑے ہو کر میڈیا کے سامنے بیانات دے رہے تھے۔

وال سٹریٹ جنرل کی سٹوری غلط ہے اور ہم اس کے خلاف قانونی کاروائی کریں گے۔

مجھے ٹی وی والوں کی طرف سے کال آئی کہ ڈی جی نیب آ رہے ہیں آپ آیں میں نے کہا کہ نہیں۔

میں ڈی جی نیب کو کنفرنٹ کر کے شرمندہ نہیں کرنا چاہتا تھا۔

سابق صدر اور چیرمین سینٹ وسیم سجاد نے کہا کہ

ایسے لگ رہا ہے کہ نواز شریف کی لیگل ٹیم سیاسی نتائج کی بجائے قانونی پہلو سامنے رکھ کر کیس لڑ رہی ہے۔

نواز شریف چاہتے ہیں کہ ان کو پارلیمنٹ میں کی گئی تقریر پر استثنی مل جائے۔

جج کھوسہ صاحب نے کہا تھا کہ قطری خط کی کوئی حیثیت نہیں ہے۔

نیب کا قانون کہ وہ کسی کو نوے دنوں کے لئیے اندر رکھ سکتا ہے بہت زیادتی کی بات ہے۔

نیب کے چیرمین کی پاور کہ وہ کسی کو بھی پکڑ سکتے ہیں اس پر بھی تنقید ہو رہی ہے۔

ہر جرم میں ضمانت ہو جاتی ہے تو پھر نیب کے قانون میں ضمانت کیوں نہیں ہوتی۔

پیپلز پارٹی کے عاجز دھامڑا نے کہا کہ

پیپلز پارٹی نے کہا تھا کہ احتساب پر ٹی او آرز بنا لئیے جایں لیکن مسلم لیگ ن نہیں مانی تھی۔

ایک طرف لیگل اور دوسری طرف سیاسی ٹیم تھی اور میاں نواز شریف درمیان میں تھے۔

نواز شریف کی لیگل اور سیسی ٹیم کے درمیان ایک گیپ تھا۔

حکومت کہہ رہی ہے کہ کچھ لوگ این آر او مانگ رہے ہیں تو پھر ان کے نام بھی بتایں۔

کے پی کے سے بھی بے نامی اکاؤنٹس آ رہے ہیں کیا وہ بھی پیپلز پارٹی پر ڈال دیں گے۔

آج کل نیب حکومت کا پسندیدہ ادارہ ہے۔

http://nadeemmalik.wordpress.com/

CURRENT AFFAIRS

15 November, 2018 15:58

NADEEM MALIK LIVE

www.humnews.pk.com

15-11-2018

نواز شریف پاناما پر روز اس لئیے بیانات بدلتا ہے کیونکہ جھوٹ کے کوئی پاؤں نہیں ہوتے۔ زرتاج گل کی ندیم ملک لائیو میں گفتگو

نواز شریف اب تک پاناما کیس پر کئی یو ٹرن لے چکے ہیں بہتر ہوتا کہ ایک ہی دفعہ سچ بول دیتے۔

آج نواز شریف پارلیمنٹ میں کی ہوئی تقریر پر استثنی مانگ رہے ہیں۔

جب کسی طاقتور پر کرپشن کی وجہ سے ہاتھ ڈالا جاتا ہے وہ کہتا ہے کہ قانون شکنی ہو گئی ہے۔

پی ٹی آئی کے جس شخص کے خلاف بھی کیس ہے وہ عدالت میں پیش ہوتا ہے اور ہر سوال کا جواب دیتا ہے۔

چاہے پی ٹی آئی کا بندہ ہو یا کوئی اور جو بھی کرپشن کرے گا اس کا احتساب ہو گا۔

مسلم لیگ ن کے ملک محمد احمد نے کہا کہ

نواز شریف کے کیس کے دو پہلو تھے ایک قانونی اور دوسرا سیاسی تھا۔

نواز شریف سے سیاسی پہلو پر کئی غلطیاں ہوئی ہیں۔

پاناما کیس میں قانونی پہلو کو سیاسی طور پر حل کرنے کی کوشش کی گئی جو غلطی تھی۔

ہم نواز شریف سے کہتے رہے کہ احتیاط سے کام لیں یہ روز عدالت کے باہر کھڑے ہو کر میڈیا کے سامنے بیانات دے رہے تھے۔

وال سٹریٹ جنرل کی سٹوری غلط ہے اور ہم اس کے خلاف قانونی کاروائی کریں گے۔

مجھے ٹی وی والوں کی طرف سے کال آئی کہ ڈی جی نیب آ رہے ہیں آپ آیں میں نے کہا کہ نہیں۔

میں ڈی جی نیب کو کنفرنٹ کر کے شرمندہ نہیں کرنا چاہتا تھا۔

سابق صدر اور چیرمین سینٹ وسیم سجاد نے کہا کہ

ایسے لگ رہا ہے کہ نواز شریف کی لیگل ٹیم سیاسی نتائج کی بجائے قانونی پہلو سامنے رکھ کر کیس لڑ رہی ہے۔

نواز شریف چاہتے ہیں کہ ان کو پارلیمنٹ میں کی گئی تقریر پر استثنی مل جائے۔

جج کھوسہ صاحب نے کہا تھا کہ قطری خط کی کوئی حیثیت نہیں ہے۔

نیب کا قانون کہ وہ کسی کو نوے دنوں کے لئیے اندر رکھ سکتا ہے بہت زیادتی کی بات ہے۔

نیب کے چیرمین کی پاور کہ وہ کسی کو بھی پکڑ سکتے ہیں اس پر بھی تنقید ہو رہی ہے۔

ہر جرم میں ضمانت ہو جاتی ہے تو پھر نیب کے قانون میں ضمانت کیوں نہیں ہوتی۔

پیپلز پارٹی کے عاجز دھامڑا نے کہا کہ

پیپلز پارٹی نے کہا تھا کہ احتساب پر ٹی او آرز بنا لئیے جایں لیکن مسلم لیگ ن نہیں مانی تھی۔

ایک طرف لیگل اور دوسری طرف سیاسی ٹیم تھی اور میاں نواز شریف درمیان میں تھے۔

نواز شریف کی لیگل اور سیسی ٹیم کے درمیان ایک گیپ تھا۔

حکومت کہہ رہی ہے کہ کچھ لوگ این آر او مانگ رہے ہیں تو پھر ان کے نام بھی بتایں۔

کے پی کے سے بھی بے نامی اکاؤنٹس آ رہے ہیں کیا وہ بھی پیپلز پارٹی پر ڈال دیں گے۔

آج کل نیب حکومت کا پسندیدہ ادارہ ہے۔

http://nadeemmalik.wordpress.com/

CURRENT AFFAIRS

Brexit: The Irish Perspective

Being thrown right into the middle of the Brexit storm was something that no one in Ireland wanted or in anyway designed. Being in such an undaunting position with so much of Irish exports either going to the UK or through the UK was never going to be in Irish favour. 515 more words

European Union

Back to the blog...

What can I say? the Government is in chaos; we have only twelve years in which to take genuine lasting action on climate breakdown; and we are facing an extinction crisis as species after species is wiped off the face of this earth. 132 more words

Current Affairs

Police on the offence-ive after Grenfell arrests

This week 6 men were arrested for posting a video online of a burning effigy of the Grenfell tower.

Before we go any further, I’d like you all to take a minute to watch said… 470 more words

Current Affairs