Tags » Exchange Rate

چین اور امریکہ اقتصادی ٹکراو

چند برسوں یا عشروں تک ذر مبادلہ کا معیار امریکی ڈالر کے بجائے سونا ہو گا۔ بین الاقوامی منڈی میں سونا بحیثیت زر مبادلہ دراصل امریکہ کی بین الاقوامی معیشت پر اجارہ داری کی موت ہو گی کیونکہ موجودہ حالت میں امریکی ڈالر کی بین الاقوامی منڈی میں طلب امریکہ کے ذر مبادلہ کے ذخائر کی ایک بڑی وجہ ہے۔ روس کا سب سے بڑا سبربیک ۲۰۱۸ میں چین کو ۱۰ سے ۱۵ ٹن سونا فراہم کرنے کی منصوبہ بندی کر رہا ہے اور یہ سلسلہ ۲۰۱۴ سے جاری ہے وارضح رہے کہ چینی کرنسی ین اور روسی روبل سو فیصد سونے کے ذخیرہ سے منسلک ہیں۔

چین شنگھائی تعاون کی تنظیم (جس کے اس وقت آٹھ رکن ممالک ہیں اور مستقبل میں بڑھ بھی سکتے ہیں جن میں ہندوستان اور پاکستان بھی شامل ہیں)، بریکس اور دیگری اقتصادی تنظیموں کی بلاواسطہ اور بالواسطہ معاونت سے بین الاقوامی تجارتی منڈی پر اپنی دھوک بٹھانے کی کوشش کر رہا ہے جبکہ چائنہ پاکستان اقتصادی راہداری جیسے بڑے منصوبے کی تکمیل کے بعد چین کی خطے میں اقتصادی برتری کے ساتھ ساتھ سیاسی اور فوجی مداخلت بھی بڑھ جائے گی۔ شنگھائی تعاون تنظیم میں پہلے ہی وسط ایشیائی ممالک شامل ہیں اور آئندہ چند برسوں میں عرب ممالک بھی چین کی طرف جھکنے پر مجبور ہو جائیں گے۔ ایران پہلے ہی ترقیاتی، اقتصادی اور دفاعی معائدوں میں چین سے منسلک ہے اور امریکی پابندیاں اس تعلق کو مزید تقویت دینے کی کڑی ثابت ہو سکتی ہیں۔

چین کی سب سے بڑی کامیابی یہ رہی کہ آزادی کے بعد چین میں سیاسی استحکام رہا اور چینی سیاست آمرانہ رویوں سے بالکل نہیں کترائی، بنیادی انسانی حقوق کی پامالیوں کا مسئلہ الگ سے دبایا جاتا رہا اور علیحدگی پسند عناصر کو بزور قوت مٹایا جاتا رہا، یک جماعتی سیاسی نظام ہونے کے ساتھ ساتھ چین مختلف معاشی اور سیاسی نظریات کا ملغوبہ رہا ہے اور ابھی تک ہے۔ اسی دوران چین نے انسانی ذرائع کا بھر پور استعمال کیا اور ساتھ ساتھ آبادی کا تناسب بھی ملکی وسائل اور ضروریات کے عین مطابق ترتیب دیا۔ سیاسی جمود تو اپنی جگہ لیکن چین نے معاشی ترقی کے ساتھ ساتھ عسکری سطح پر بھی بھر پور ترقی کی اور جدید ٹیکنالوجی میں بھی یورپ اور امریکہ کے مدمقابل رہا۔

چین کی اس وقت بظاہر عسکری سطح پر انڈیا کے علاوہ کسی سے جنگ نہیں ہے البتہ چین اقتصادی طور پر پورے مغرب سے پنگا لے رہا ہے یورپی یونین گرچہ چین کے فی الحال کے اقدامات سےاتنی متاثر نہیں ہیں مگر مستقبل میں اس پر بھی اثر پڑ سکتا ہے جبکہ افریکی ممالک کے اقتصادی اتحاد بھی زیادہ متاثر نظر نہیں آ رہے ہیں لیکن مستقبل قریب میں ان کو بھی بڑے فیصلے لینے پڑ سکتے ہیں۔ فی الحال جن ممالک یا جغرافیائی وحدتوں میں چین اپنے پاوں چادر سمیت پھیلا رہا ہے ان کی کل آبادی ساڑھے چار ارب سے زائد بنتی ہے یعنی دنیا کی ستر فیصد آبادی جو کہ انسانی ذرائع کے ساتھ ساتھ قدرتی وسائل سے مالا مال ہیں۔ یوں اب امریکہ اور چین براہ راست ٹکر میں ہیں بلکہ یوں کہا جائے کہ چین دو ہاتھ آگے ہے تو بے جا نہیں ہو گا۔

امریکی ڈالر فی الحال بین الاقوامی طلب و رسد پر کھڑا ہے بین الاقومی طلب میں اس کی گراوٹ کا مطلب ڈالر کی قدر میں کمی ہے جبکہ مستقبل قریب میں امریکہ کی سیاسی صورتحال کچھ مزید خراب ہوتی نظر آ رہی ہے ان حالات میں امریکن حکمت عملی ساز کیا کریں گے فی الحال کچھ کہا نہیں جا سکتا تاہم چین کی حکمت عملی کم از کم امریکہ کو ایشیائ سے بے دخل کر دے گی۔

#جواداحمدپارسؔ

Column

What $1 brings you - funny money

https://brightside.me/wonder-curiosities/what-1-dollar-will-buy-you-around-the-world-386510/

$1 buys you a meal in Indonesia but only a snickers bar in Japan.

In my one lecture on exchange rate, I’m not an expert, its interesting to recount how: 59 more words

Country

GBP v USD: Exchange rate tumbles as Carney warns of impact of no-deal Brexit

The Pound/US dollar exchange rate has dipped slightly from yesterday’s eight-week high, relinquishing its early gains as analysts scrutinised the Bank of England’s (BoE) latest financial stability report. 389 more words

Finance

Romania's central bank keeps interest rate at record low

Romania’s central bank (BNR) board decided to keep interest rates at a record low of 1.75 percent at its Nov. 7 meeting, in a 8-1 vote, it said in its minutes released on Tuesday. 81 more words

Bloomberg

A Baptist Tells How to Get Rich

Our family played Monopoly in Mongolia using real Tugriks. Once you live in another country for awhile, you forget the exchange rate and just shop. 

Humor