Tags » Google Search Engine

Mid-November Google Algorithm Search Ranking Update

Yesterday I saw signs of a spike in webmaster and SEO chatter about ranking changes in Google. That chatter has built up over the past 24 hours and the monitoring tools, most of them, have spiked as well. 342 more words

Google Search Engine

Spider Search: an Efficient and Non-Frontier-Based Real-Time Search Algorithm

A spider is a program that visits Web sites and reads their pages and other information in order to create entries for a search engine index. 337 more words

E-Learning

How to put your website in google

Google is the most renowned search engine of this era. Today 90% of the people surf google for any problem whether it is personal issue or anything related to study, health etc. 255 more words

E-Learning

Google Search Algorithm & Ranking Update : October 7th - 9th

Looks like we had a Google algorithm update over the weekend, starting probably late Friday, October 6th and rolling out over the weekend. Most took notice on Saturday October 7th but the chatter is still fairly strong and will likely remain strong for the net couple of days. 251 more words

Google Search Engine

Thank You Google News

I have no idea how this site ended up on Google News.

Reminds me of the time when I closed our CLiK CLiK Vic Zenfolio Photo Site. 119 more words

Google

Google Algorithm & Ranking Update Chatter

Starting over the weekend, mostly Saturday and Sunday on August 19th and 20th, there were some chatter in the webmaster channels around Google fluctuations in the search results. 174 more words

Google Search Engine

گوگل کی تخلیق کی کہانی

گوگل کی تخلیق کی کہانی کیلی فورنیا کی اسٹین فورڈ یونیورسٹی کے نوجوان طالب علموں لیری پیج اور گراڈ اسکول کے طالب علم سرگی برن کے درمیان ہونے والی ملاقات سے ہوئی۔ دونوں پی ایچ ڈی کے طالب علم تھے، انہوں نے پہلی ملاقات میں تو کسی چیز پر اتفاق نہیں کیا، لیکن جلد ہی وہ ایک انقلابی فیصلہ کرنے میں کامیاب ہو گئے۔ انہوں نے ورلڈ وائڈ ویب (ڈبلیو ڈبلیو ڈبلیو) انٹرنیٹ پر موجود صفحات کو ملانے کے لیے ابتدائی طور پر بیک رب نامی ایک سرچ انجن بنایا جو آگے مختلف شکلوں میں تبدیل ہوکر بلآخر گوگل بنا۔

اگلے ہی 3 سالوں میں ان کی یہ سرچ انجن نہ صرف تعلیمی اداروں میں کامیابی ہوئی بلکہ اس نے ٹیکنالوجی اداروں کی توجہ بھی حاصل کر لی، اور اگست 1998 میں پہلی بار ٹیکنالوجی ادارے سن مائیکرو سسٹمز کے شریک بانی اینڈی بیچلوشیم نے انہیں ایک لاکھ ڈالر کا سرمایہ فراہم کیا، یوں گوگل انکارپوریٹ ادارہ بنا۔ نئے کارپوریٹ ادارے نے اب کیلی فورنیا کے مینلو پارک ایریا میں موجود ایک گیراج سے کام کا آغاز کیا، اس گیراج کو کرائے پر حاصل کیا گیا، آگے چل کر یہ گیراج اس ادارے کا مرکزی دفتر بنا، اور اس گیراج کی مالکن سوزن وجوکی پہلے گوگل کی ملازم نمبر 16 اور پھراسی ادارے کی کمپنی’یوٹیوب‘ کی چیف ایگزیکٹو آفیسر (سی ای او) بنیں۔

اسی گیراج کی حدود کو بڑھا کر مائونٹین ویو تک پھیلایا گیا، جہاں آج گوگل پلیکس کے نام سے دنیائے انٹرنیٹ کے اس سب سے بڑے ادارے کا ہیڈ کوارٹر موجود ہے۔ گوگل کا پہلا ڈوڈل 1998 میں ہی بنایا گیا، پھر ایک کے بعد ایک اور ہر ملک کے لیے الگ الگ اور خصوصی مواقع پر بھی اسپیشل ڈوڈل بنانے کا کام شروع کیا گیا۔ گوگل کے پہلے کتے ملازم کا نام یوشکا ہے، آج گوگل کے دفاتر دنیا کے 50 ممالک میں موجود ہیں، اور اس کے 60 ہزار ملازم ہیں۔ آج دنیا کا کوئی ملک ایسا نہیں جہاں گوگل پر چیزیں سرچ نہ کی جاتی ہوں، یوٹیوب پر ویڈیوز نہ دیکھے جاتے ہوں، جی میل سے ای میل نہ کیا جاتا ہے، اور اینڈرائڈ سسٹم کے ذریعے فون نہ چلائے جاتے ہوں۔

Google