Tags » Gulzar

Simplicity

shaam se aankh mein nami si hai
aaj phir aap ki kami si hai

– gulzar

Simplicity is also depth. Simplicity is to break away from the multiple entanglements of the world, and remember the truth about ourselves, about our lives.

Poetry

کتابیں جھانکتی ہیں بند الماری کے شیشوں سے

کتابیں جھانکتی ہیں بند الماری کے شیشوں سے

بڑی حسرت سے تکتی ہیں

مہینوں اب ملاقاتیں نہیں ہوتیں

جو شامیں ان کی صحبت میں کٹا کرتی تھیں ، اب اکثر

گزر جاتی ہیں کمپیوٹر کے پردوں پر

بڑی بےچین رہتی ہیں

انہیں اب نیند میں چلنے کی عادت ہوگئی ہے

بڑی حسرت سے تکتی ہیں

جو قدریں وہ سناتی تھیں۔۔۔۔۔

کہ جن کے سیل کبھی مرتے نہیں تھے

وہ قدریں اب نظر آتی نہیں گھر میں

جو رشتے وہ سناتی تھیں

وہ سارے ادھڑے ادھڑے ہیں

کوئی صفحہ پلٹتا ہوں تو اک سسکی نکلتی ہے

کئی لفظوں کے معنی گرپڑے ہیں

بنا پتوں کےسوکھے ٹنڈ لگتے ہیں وہ سب الفاظ

جن پر اب کوئی معنی نہیں اگتے

بہت سی اصطلاحیں ہیں ۔۔۔۔

جو مٹی کے سکوروں کی طرح بکھری پڑی ہیں

گلاسوں نے انہیں متروک کرڈالا

زباں پہ ذائقہ آتا تھا جو صفحے پلٹنے کا

اب انگلی کلک کرنے سے بس اک

جھپکی گزرتی ہے۔۔۔۔۔

بہت کچھ تہہ بہ تہہ کھلتا چلا جاتا ہے پردے پر

کتابوں سے جو ذاتی رابطہ تھا کٹ گیا ہے

کبھی سینے پہ رکھ کے لیٹ جاتے تھے

کبھی گودی میں لیتے تھے

کبھی گھٹنوں کو اپنے رحل کی صورت بناکر

نیم سجدے میں پڑھا کرتے تھے چھوتے تھے جبیں سے

خدا نے چاہا تو وہ سارا علم تو ملتا رہے گا بعد میں بھی

مگر وہ جو کتابوں میں ملا کرتے تھے سوکھے پھول

کتابیں مانگنے گرنے اٹھانے کے بہانے رشتے بنتے تھے

ان کا کیا ہوگا

وہ شاید اب نہیں ہوں گے

(شاعر: گلزار)

Urdu

Kitabein by Gulzar

Gulzar saab in his unique, inimitable style, pens an wonderful description of the changes in our lives as books get replaced with screens. Absolutely wonderful! 582 more words

Urdu Poetry And Texts

Gulzar at JLF - नज़्म उलझी हुई है सीने में

It was a double treat at JLF as Gulzar and Javed Akhtar graced the stage on the same day. Gulzar saab was in conversation with Pawan Verma about his book “Green Poems” which has been translated into English by Verma. 414 more words

JLF

गीले बाल

तुम एक तकिये में गीले बालों की भर के ख़ुश्बू
जो आज भेजो…
तो नींद आ जाए, सो ही जाऊँ…

Pyar/ Ishq/ Muhabbat Shayri

Poems and Indian Cinema… an inseparable journey. – Article VI

जंगल जंगल बात चली है पता चला है
चड्डी पहन के फूल खिला है, फूल खिला है

एक परिंदा, हाय शर्मिंदा
था वो नंगा
भाई इससे तो अंडे के अंदर

Hindi

Gulzar

“O Dastaañgo, aik panna aur kholo, aur kaho…”
And we all saw, more than 1500 of us, how a relationship so fragile, so precious, so battered by an unforgettable sense of wrong, as that between Draupadi and Yudhishtira, was revived by a simple act of friendship. 273 more words

Poetry