Tags » Old Memories

Some folks are so attached to the past to the point of refusing to move forward. For instance, they are always waiting for that day they would go back to an old job they lost, an old love they lost, an old status they lost and everything they once loved so much and still wish to go back to loving them much more once more. 51 more words

Quotes

This I Remember

It was 1974 and I was “babysitting”  at a nearby neighbor’s and I remember seeing REO Speedwagon, pre Kevin Cronin, play this song on late night TV…Was it Midnight Special or Don Kirshner’s Rock Concert? 44 more words

REO Speedwagon

میں، قلم اور ناسٹیلجیا

میں، قلم اور ناسٹیلجیا
میں نومبر کی 22 تاریخ کو 43 سال کا ہوجائوں گا ۔میرا تاثر اور تصور یہ ہے کہ گزشتہ 20سالوں میں ہمارے معاشرے میں ایسی اور اتنی تبدیلیاں آئی ہیں کہ انہوں نے ہمارے رہن سہن کو ہی بدل کر رکھ دیا ہے۔ میرے ہم عمر لوگ خوش قسمت ہیں کہ انہوں نے تاریخ کا حصہ بنتی بہت سی چیزوں کو نہ صرف دیکھا بلکہ ان کاحصہ بھی رہے جبکہ دوسری طرف آج کے دور کی چیزوں سے بھی مستفید ہو رہتے ہیں۔ ۔ مثلاً آج کے بچوں یا لڑکوں سے ”قلمی دوستی ” کا پوچھیں تو وہ ایسے منہ تکنے لگتے ہیں جیسے ان سے طلسم ہوشربا کے دور کی کوئی بات پوچھ لی گئی ہو۔ دوستوں کو خط لکھنے کی روایت ہی ختم ہوگئی ہے جبکہ میں نے ابھی چند سال پہلے ہی بہت سے عزیزازجان دوستوں کے خطوط سے بھرے بڑے بڑے لفافوں کو نذر آتش کیا،ا سلئے کہ اب انہیں سنبھالنے کی جگہ نہ رہی۔ میں دوستوں کو لمبے لمبے ،کئی کئی صفحات پر مشتمل خط لکھا کرتا اور جوابات بھی ایسے ہی آیا کرٓتے ۔ڈاکیا ہر دوسرے نہیں تو تیسرے دن لازماً ہمارے گھر خط پھینک کر جاتا۔ ایک دفعہ مظفرۤاباد میں اپنے ایک دوست اعجاز فاروق منہاس کو دوصفحوں پر مشتمل خط لکھا تو جواب آیا ”آپ کی چِٹ موصول ہوئی، ذرا بھی تشفی نہیں ہوئی ۔۔۔” آج اگر کسی بچے سے لالٹین کا پوچھیں تو وہ حیرت سے آنکھیں پھیلاتا ہے، جب کہ میں نے مڈل سٹینڈرڈ کا امتحان جب قریب قریب ”اعزازی نمبروں” سے پاس کیا تو ہمارے گھر ابھی بجلی کے چراغوں سے روشن نہ ہوتے تھے ۔ہم گرمیوں میں پنکھا بھی ”ہمت فین” یعنی وہ دستی پنکھی استعمال کرتے تھے جو آپ کو ہوا آپ کے زور بازو کے برابر ہی دیتی تھی ۔ہم چکنی مٹی سے تختیوں پر پوچا لگاتے ، بیٹری سیلوں میں سے سکہ نکال کر اس پر لکیریں ڈالتے اور کانے کی قلمیں خود گھڑ کر ان سے تختی لکھتے ۔ہم سلیٹ سلیٹی استعمال کرتے اور چھٹی کے وقت ”اِک دونی دونی ، دو دونے چار” والے پہاڑے پڑھتے۔ اب بچوں کے سامنے ”پہاڑے ” بولا جائے تو وہ پوچھتے ہیں کہ کون سے پہاڑ کی بات ہورہی ہے ؟ واش رومز ہمارے پرائمری سکول میں نہ تھے لہٰذا ہم باجماعت ”اوپن ٹوائلٹ” سے مستفید ہوتے ۔ یہی صورت حال گھر میں بھی تھی، اور پھر کسانوں نے محلے کے گھروں میں آکر لوگوں سے کہا کہ اب گھروں کے اندر ٹوائلٹ بنائیں، اس لئے کہ فصلوں کی کٹائی میں انہیں دقت ہوتی ہے۔ ہر ایک کے ساتھ دلچسپ واقعات اور کہانیاں جڑی ہیں۔ کبھی کبھی دل چاہتا ہے کہ سیاسی توتکار کی بجائے ان موضوعات پر لکھاجائے۔

nov 19

jackals wail

new notes in soundscape

old memories

Morning Ku

Diary Excerpt: Daisy Chains

May, some years ago, Age 9

Today, we played outside ‘cos it’s Sunday. I made a daisy chain but R ruined it. Well, it doesn’t matter. 132 more words

Family

டிரான்ஸ் சைபீரியன் ரயில்வேயின் நூறு வயது....!!!


இந்த ஆண்டு (2016) டிரான்ஸ் சைபீரியன் ரயில்வே பயன்பாட்டுக்கு வந்த நூறாவது ஆண்டாகும். இந்தியாவிற்குக் கடல் வழி கண்டறிந்தது, அமெரிக்காவைக் கண்டறிந்தது, சூயல் கால்வாய் வெட்டப்பட்டது போலவே டிரான்ஸ் சைபீரியன் ரயில்வே உருவாக்கப்பட்டதும் மிக முக்கியமான நிகழ்வாகும்!

Environment