Tags » PASSIVE SMOKING

How smoking causes cancer

How smoking causes cancer

Smoking is by far the biggest preventable cause of cancer. Thanks to years of research, the links between smoking and cancer are now very clear. 2,101 more words

Salivary Antioxidant Power of Passive Smokers

Passive smoking, chiefly among young children, may cause serious health problems according to a report by World Health Organization, WHO. It is estimated that almost one billion grown up people smoke worldwide and at least 700 million children live with them. 132 more words

Genetics & Molecular Biology

The Value of Communication

Choices

When given the brief ‘Choices’ for my first rotation in Visual communication, there were various potential directions that I could explore. Through helpful group mind map work, I swiftly decided that life defining choices was an area that excited me the most. 1,129 more words

Rotation

P.S I HATE YOU - SCREENPLAY

P.S I HATE YOU (SHORT FILM)

SCENE 1:

ECR ரோட்டில் புதிதாக கட்டப்பட்டுக்கொண்டிருக்கும் கட்டிடத்தில், ஏதோ ஒரு தளத்தில் , ஜன்னல் ஓரத்தில் நின்று, கட்டிடம் அருகே உள்ள ரோட்டை வேடிக்கைப்பார்த்து  கொண்டு புகை பிடித்துக்கொண்டிருந்தான் கார்த்திக். 69 more words

سگریٹ نوشی کی حوصلہ شکنی…کیسے؟

ایک تازہ ترین ریسرچ سے سگریٹ نوشی کے ان نقصانات کا بھی پتہ چلا ہے، جو پہلے معلوم نہیں تھے۔ اس سے صرف پھیپھڑوں کا کینسر ہی نہیں بلکہ اندھا پن، ذیابیطس، جگر اور بڑی آنت کے کینسر جیسی بیماریاں بھی ہو سکتی ہیں۔ تازہ ترین ریسرچ پر مبنی’’سرجن جنرلز رپورٹ‘ ‘کے نتائج پیش کرنے کے لیے صحت کے شعبے سے منسلک تمام اعلیٰ امریکی عہدیدار وائٹ ہاؤس میں موجود تھے۔ امریکی حکومت کی طرف سے اس نوعیت کی ایک رپورٹ پچاس برس پہلے پیش کی گئی تھی۔ 1964ء میں تمباکو نوشی کے نقصانات پر پیش کی گئی رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ سگریٹ نوشی سے پھیپھڑوں کا کینسر ہو سکتا ہے۔ امریکا میں بیماریوں کے کنٹرول اور روک تھام کے ادارے (سی ڈی سی) کے ڈائریکٹر تھامس فریڈن کہتے ہیں کہ تمباکو نوشی امریکا میں قبل از موت کا سبب بننے والی سب سے بڑی بیماری ہے۔

ان کے مطابق آج بھی نصف ملین امریکیوں کی موت کا سبب تمباکو نوشی بنتی ہے۔ وہ کہتے ہیں کہ تمباکو نوشی اس سے بھی بدتر ہے،جتنا ہم اسے پہلے خیال کرتے تھے۔ اس تازہ ترین تحقیقی رپورٹ کے مطابق کثرت سے تمباکو نوشی ذیابیطس کے علاوہ تیرہ اقسام کے کینسر کا سبب بن سکتی ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ جو افراد سگریٹ نوشی نہیں کرتے لیکن اس کے دھوئیں میں سانس لیتے ہیں، ان میں دل کے دورے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔ امریکا میں قائم مقام سرجن جنرل بورس لوشنیک کا خبردار کرتے ہوئے کہنا تھا آج کے دورِ جدید میں سگریٹ ہماری سوچ سے بھی زیادہ خطرناک ہیں۔ ڈاکٹر لوشنیک کہتے ہیں، ‘‘سگریٹ بنانے کا طریقہ اور اس کے اندر کے کیمیکل وقت کے ساتھ کافی حد تک بدل گئے ہیں۔ کچھ کیمیکل ایسے بھی ہیں جو پھیپھڑوں کے کینسر کا خطرہ تیز کرتے ہیں۔‘‘ امریکی حکومت نے 2020 تک تمباکو نوشی کرنے والوں کی شرح میں 12 فیصد تک کمی کا ہدف قائم کر رکھا ہے ، لیکن ماہرین کے مطابق اسے پورا کرنا مشکل ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا کہ سگریٹ پینے والوں میں نظر کے کمزور ہونے یا اندھے پن کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔

اس کے علاوہ خواتین میں سگریٹ نوشی کے اثرات سے نوزائیدہ بچوں میں پیدائشی کٹے ہونٹ، حمل کے دوران پیچیدگیوں کا پیدا ہونا، جوڑوں کا درد اور جسم کے دفاعی صلاحیت میں کمی ہوجاتی ہے۔ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اگر تمباکو نوشی کی شرح کم نہیں ہوئی تو امریکا میں ہر 13 بچوں میں سے ایک بچہ آگے چل کر اس سے جڑی کسی بیماری کی وجہ سے جان گنوا دے گا۔ ایک دوسری امریکی تحقیق کے مطابق دنیا میں آبادی بڑھنے کے ساتھ ساتھ تمباکو نوشی کرنے والوں کی تعداد میں بھی اضافہ ہوا ہے۔ گزشتہ تین دہائیوں میں سگریٹ نوشوں کی تعداد 72 کروڑ سے بڑھ کر تقریبا 97 کروڑ ہو گئی ہے۔ یہ صرف امریکیوں کا مسئلہ نہیں بلکہ پوری دنیا کا مسئلہ ہے۔ اس سے نجات پانے کے لیے ایک یونیورسل مہم کی ضرورت ہے جس کا آغاز سگریٹ کی ہر ڈبیا پر ’تمباکو نوشی مہلک ہے‘ جیسی عبارتیں چھاپنے سے ہو چکا ہے۔ اس سلسلے میں جرمن نے سگریٹ کی ڈبیوں پر تحریروں کی ایک مہم چلائی ہے جس کی تقلید ضروری ہے۔

سال کی خصوصی مہلت:

 سگریٹ نوشی دانتوں کے لیے زہرِ قاتل ہے۔ یہ پیغام ہے، اس طرح کی تصاویر کا۔ سگریٹ کی ڈبیا کا دو تہائی حصہ ایسی تصاویر سے ڈھکا ہونا چاہیے۔ سگریٹ اور تمباکو کی مصنوعات کی مئی 2016ء تک تصاویر کے بغیر شائع ہونے والی پیکنگز ابھی مزید ایک سال تک مختلف اسٹورز پر فروخت کی جا سکیں گی، پھر ان ہولناک تصاویر سے بچنا محال ہو گا۔

تمباکو نوشی کی تشہیر پر بھی پابندی:

ایک نئے جرمن قانون کے تحت عوامی مقامات پر آویزاں کیے گئے بِل بورڈز اور پوسٹرز پر اور ایسے سینما گھروں کے اندر سگریٹ نوشی کی تشہیر منع ہو گی، جہاں اٹھارہ سال سے کم عمر افراد بھی فلمیں دیکھ سکتے ہیں۔ سیاستدان امید کر رہے ہیں کہ ان اقدامات کے نتیجے میں نوجوان نسل سگریٹ کے قریب بھی نہیں آئے گی۔

ابتدا آسٹریلیا نے کی:آسٹریلیا کے قانون ساز سگریٹ نوشی کے خلاف اقدامات میں اس سے بھی کہیں آگے چلے گئے۔ وہاں 2012 سے سگریٹ کی ہر ڈبیا پر بغیر کسی عبارت کے بڑی بڑی تصاویر سگریٹ نوشی سے خبردار کر رہی ہیں۔

کمپنیاں ناراض:

سگریٹ کی ہر نئی ڈبیا پر اْس کے مخصوص برانڈ کا نام اب نچلے حصے میں چھوٹے سائز ہی میں درج ہو گا۔ پھر برانڈ کوئی بھی ہو، ہر پیکٹ کا رنگ بھی ایک جیسا ہے۔ اب جرمنی میں تصویر سگریٹ کی ڈبیا کے دو تہائی حصے کو ڈھکتی ہے لیکن فرانس میں اس سے بھی زیادہ حصے کو ڈھانپے گی۔

یہ عادت بتدریج کم ہو جائے گی:

سگریٹ کی ڈبیا پر تصاویر کے مخالف حلقوں کے خیال میں یہ تصاویر لوگوں کو سگریٹ نوشی سے نہیں روک پائیں گی۔ پہلے سے سگریٹ نوشی نہ کرنے والے سگریٹ کا پیکٹ اٹھانے سے جھجکیں گے۔ ماہر نفسیات کرسٹوف کروئگر کے مطابق ’جب سگریٹ نوشی کو خوبصورت پیکنگز اور اشتہارات میں دکھائی جانے والی اچھی چیزوں کے ساتھ مربوط نہیں کیا جائے گا تو رفتہ رفتہ سگریٹ نوشی کم ہوتی جائے گی‘۔

فائزہ نذیر احمد

World

The Smoker's Jargon Decoded

The following terms are not in alphabetical order because neither smoking, nor coolness or Death for that matter, are very systematized actions.

cigarette /sigaret/ noun… 514 more words

Social Commentary

5 Reasons Why Smoking Is Still The Shizz: A Guide To World Domination

World No Tobacco Day is tomorrow and we all know what means. Come on, admit it. Aren’t you all bored of those sickeningly long anti-smoking ads before your favourite superhero movie? 494 more words

Essays