Tags » Ziyarat

ایران و عراق کے زائرین کے لیے فیری سروس کا امکان

(Dawn 12 June, 2015)

کراچی: ایران اور عراق زیارت کے لیے جانے والے مسافروں کے لیے کراچی سے ایک فیری سروس شروع کرنے کی تجویز پر پورٹس و شپنگ کی وزارت غور کررہی ہے۔ حال ہی میں پورٹس وشپنگ کے وفاقی وزیر سینیٹر کامران مائیکل کی صدارت میں ایک اجلاس پی این ایس سی کے آفس میں منعقد ہوا، جس کے دوران مطلع کیا گیا کہ پاکستان سے متحدہ عرب امارات کے لیے ایک تیز رفتار کارگو فیری سروس بھی تیاری کے مراحل میں ہے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ ایک قومی جذبے کے تحت حکومت زائرین کے لیے فیری سروس شروع کرنے کی خواہشمند ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ سروس فضائی سفر کے مقابلے میں سستی ہوگی، اور یہ ایران اور عراق میں مقدس مقامات کی زیارت پر جانے والے لوگوں کے لیے یہ بہترین متبادل راستہ ہے۔ وفاقی وزیر سینیٹر کامران مائیکل نے نجی شعبے کو حصہ اس طرح کے منصوبوں میں حصہ لینے کی دعوت دی۔ اس اجلاس میں ڈائریکٹر پورٹس اینڈ شپنگ عارف الہٰی اور اس وزارت کے دیگر اعلیٰ سطح کے حکام نے شرکت کی۔

Pakistan

Our first trip to Iraq

Eid e Nawrooz mubarak bashe! Nawrooz is a big deal here. The beginning of spring and the wonderful weather that ushers in with the new season. 590 more words

Family Life

Ziyarat to Mashhad, and a distraction

Sometimes I wonder how much different living in Qom would be if we had come here right after we got married. Don’t get me wrong, I love living here with my kids, but naturally our concerns about moving and settling were very much centered around our kids. 421 more words

Family Life

Limited Edition “1 Print + 1 Book” Set launched for “333 Saints”

The holidays are coming soon and beautiful books and prints make great presents! 

So, the Kyoudai Press has decided to issue two of the black and white photographs from “333 Saints” as special limited editions. 173 more words

Pertinent Questions – 6

Many mumineen would remember of an incident few years ago that happened on a flight where Moula Syedna Burhanuddin RA was travelling and the “reformist” Engineer had misbehaved. 355 more words

ZIYARAT SE MUTA-ALIQ ZAEEF HADEES.

زیارت سے متعلق ضعیف روایت

 ایک روایت کی تحقیق

“من زار قبری ،وجبت لہ شفاعتی”
ترجمہ : “جس نے میں قبر کی زیارت کی اس پر میری شفاعت واجب ہوگئی” ۔

تخریج:
(مجمع الزوائد ٤:٢ ،
تلخیص الحبیر٢:٢٦٧،
نیل الاوطار ٥: ١٧،
کشف الخفاء ٢:٣٢٨،
دارقطنی السنن ٢:٢٧٨ ،
حکیم ترمذی توادر الاصول ٢:٦٧،
دولابی کتاب الکنی والاسماء ٢:٦٤،
بیہقی شعب الایمان ٤:٤٩٠،
سبکی شفاء السقام فی زیارت خیرالانام ٣) 

روایت کی تحقیق
……………………..
(١)امام بیہقی رحمہ اللہ نے نے اس روایت کو نقل کرکے اس کے ایک راوی عبداللہ بن عمری کو منکر کہا ہے یعنی یہ روایت ان کے نزدیک صحیح نہیں ہے۔
(شعب الایمان ٤:٣٩٠)

(٢) امام دار قطنی رحمہ اللہ نے اس روایت کو نقل کیا ہے اور اس کے ایک روای موسی بن ھلال کے بارے میں فرماتے ہیں کہ وہ مجہول ہے۔( میزان اعتدال جلد ٤ص٢٠٧)

یہ اقوال ان کے ہیں جنہوں نے اس روایت کو نقل کیا ہے اور اس کے بعد دیگر کتب کے حوالوں پر بھی نظر ڈالتے ہیں:

(١) مجمع الزوائد میں امام ہیثمی رحمہ اللہ نے اس روایت کو ضعیف کہا ہے۔( مجمع الزوائد جلد ٣کتاب الحج رقم ٥٨٤١ ) 

(٢) امام عجلونی رحمہ اللہ نے اسے کشفا الخفاء میں نقل کیا ہے اور کشف الخفاء میں نقل ہونے کا مطلب ہی یہی ہے کہ یہ روایت ضعیف ہےکیونکہ امام عجلونی رحمہ اللہ نے اپنی کتا ب میں ان روایات کو جمع کیا ہے جو عوام الناس کی زبانوں پرمشہور ہیں مگر ان کا شریعت سے کوئی تعلق نہیں ہے ۔ (دیکھئے مقدمہ کشف الخفاء) 

(٣) امام نووی رحمہ اللہ نے فرمایا ہے کہ اس کی سند بہت ضعیف ہے ۔(کما فی دفاع عن الحدیث النبویۖص ١٠٦)

(٤) امام سیوطی رحمہ اللہ نے نقل فرمایا ہے کہ امام ذہبی رحمہ اللہ فرماتے ہیں اس روایت کی تمام اسناد ضعیف ہیں (الدررالمنتثرة فی الاحادیث المشتھرة ص١٩)اس کتاب میں امام سیوطی رحمہ اللہ نے ضعیف اور موضوع احادیث کو جمع کیا ہے ۔

(٥) ابن القطان رحمہ اللہ فرماتے ہیں اس روایت میں موسی بن ھلال مجہول ہے۔(لسان المیزان جلد ٧ص١٣٩) 

(٦)ابن حاتم رحمہ اللہ فرماتے ہیں موسی بن ھلال مجہول ہے ۔(لسان میزان جلد ٧ص١٣٩)

(٧)العقیلی رحمہ اللہ فرماتے ہیں کہ ” لا یصح فی ھذا الباب شی” اس باب میں کوئی بھی (روایت) صحیح نہیں ہے ۔(تلخیص الحبیر جلد ٢ص٢٦٧) 

(٨)امام النسائی رحمہ اللہ فرماتے ہیں کہ اس روایت میں عبداللہ بن عمر العمری ہے اور وہ ضعیف الحدیث ہے ۔ (تھذیب الکمال جلد ١٥ ص ٣٣١۔٣٣٠)

(٩)ابن المدینی رحمہ اللہ فرماتے ہیں عبداللہ بن عمر العمر ی ضعیف ہے۔ (حوالہ ایضاََ) 

(١٠) عصر حاضر کے محدث علامہ ناصر الدین البانی رحمہ اللہ نے بھی اس روایت کو موضوع کہا ہے۔( ضعیف الجامع الصغیر رقم ٥٦٠٧)

(١١)حافظ ابن حجررحمہ اللہ نے اس روایت کے تمام طرق اپنی کتاب تلخیص الحبیر میں جمع کر کے فرمایا ہے کہ : طرق ھذا الحدیث کلہا ضعیفة(تلخیص الحبیر جلد ٢ص ٢٦٧) اس روایت کے تمام طرق ضعیف ہیں ۔” 

اس ضعیف روایت سے امت کو آگاہ کریں.

Others